امیر جماعت اسلامی جناب سراج الحق نے آج مینار پاکستان پر جلسہ سے خطاب کے دوران فرمایا کہ پاکستان کے چند عاقبت نا اندیش سیکولر لوگ یہ کہتے ہیں کہ قائداعظم نے پاکستان سیکولرازم کو پروان چڑھانے کے لئے بنایا ، تو کیا سیکولرزم کے
لئے ہندوؤں سے صلح کرنی

چاہیئے تھی یا ان کے خلاف لڑنا چاہیئے تھا۔۔۔اور انگریزوں کے خلاف بھی۔۔۔ لیکن پاکستان چونکہ ایک اسلامی فلاحی ریاست کی تکمیل کے لئے بنا تھا اس لئے وقت کے تما م ظالموں ، غاضبوں، کفار کے خلاف لڑ کر پاکستان حاصل کیا گیا۔۔۔۔

بالکل درست فرمایا جناب سراج الحق صاحب نے۔۔۔

لیکن کوئی ان سے (سراج الحق صاحب) سے یہ پوچھے کہ کرپشن کے خاتمے کے لئے زرداری ، نواز سے اتحاد کیوں لازم ہے۔ رحمٰن ملک جیسے مداری ، زر-داری کب سے پاکستان کے خیر خواہ ہو گئے جو آپ ان کے ساتھ مل کر پی ٹی آئی کی جدوجہد کی نفی کر رہے ہیں، پاکستانی سیاست کے اس نازک موقع پر آپ کبھی فضل الرحمٰن مولوی اور کبھی امریکی پٹھو اسفندیار ولی کی تائید کرتے پائے گئے۔۔۔
ان ہی سوالوں کے جواب میں آپ کی منافقت چھپی ہوئی ہے