دن رات جمہوریت کا راگ الاپنے والے شریف برادران جمہوریت کے قاتل ضیاء الحق کی گود میں بیٹھ کر جمہوریت کے ٹھیکیدار تو بن گئے لیکن اپنے ہر دور حکومت میں اپنی بادشاہت اور ڈکٹیٹرشپ کو بچانے کیلئے جمہوریت پر ایسے ایسے مظالم ڈھاۓ کہ ملک کے ایک بڑے طبقے کو اب جمہوریت سے نفرت ہوگئی ہے. اپنی بادشاہت کو بچانے کے لئے روپے پیسے اور نوکریوں کے لالچ سے عوام کی سپورٹ خریدنا میاں برادران کا پرانا شوق ہے. پنجاب کے سابق آئی جی پولیس عباس خان کی رپورٹ کے مطابق شریف . برادران نے اپنے پہلے دور حکومت میں صرف محکمہ پولیس میں 25 ہزار پولیس اہلکاروں کی غیر قانونی بھرتی کرکے اپنے ناپاک عزائم کا اظہار کیا

اس دھندے میں پیپلز پارٹی نے بھی آپ کا بھرپور ساتھ دیا. دونوں پارٹیوں نے عوام سے الیکشن میں سپورٹ حاصل کرنے کے لئے نوکریوں کی بندر بانٹ کا دھندا خوب کیا. بالآخر 1999ء میں پرویز مشرف نے ملک سے بادشاہت کا خاتمہ کردیا. مشرف کی بدولت ملک میں ق لیگ کی حکومت قائم ہوئی اور پرویز الہی پنجاب کے وزیراعلی بنے. پرویز الہی بھی سو فیصد میرٹ پر نوکریاں دینے کا نظام قائم نہ کر سکے لیکن چند مخصوص محکموں میں پرویز الہی نے شہباز شریف کے برعکس سو فیصد میرٹ قائم کردیا

پرویز الہی نے پنجاب پبلک سروس کمیشن کے ذریعے ہونے والی تمام بھرتیوں میں سیاسی مداخلت تقریبا” سو فیصد ختم کردی. اس کے علاوہ پرویز الہی نے پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار پنجاب میں اساتذہ کی بھرتیاں سو فیصد میرٹ پر کیں جس کو عوام نے خوب سراہا. پرویز الہی کی میرٹ پالیسی نے اگلی حکومت میں شہباز شریف کو بھی مجبور کر دیا کہ وه بھی میرٹ پر عمل درآمد کو یقینی بناۓ. شہباز شریف پر پرویز الہی کا اثر چند ہی سال قائم رہا. بالآخر پچھلے ہفتے شہباز شریف نے میرٹ کو باقاعدہ طور پر قتل کر کے پاکستان کو بیس سال پیچھے دھکیلنے کا عملی مظاہرہ کردیا

صوبہ پنجاب میں ایم پی ایز کے ذریعے تقریبا” 4500 اساتذہ کو سفارش پر بھرتی کرنے کا فیصلہ کرکے شریف برادران نے ایک بار پھر ثابت کردیا ہے کہ ان کا نوکریوں کا لالچ دے کر عوام کو خریدنے کا شوق ابھی تک زندہ ہے. ہم 2014 میں شہباز شریف کی 1990 والی حرکات کی بھرپور مذمت کرتے ہیں اور مطالبہ کرتے ہیں کہ اساتذہ کی بھرتی میں ایم پی ایز کا کوٹہ فوری طور پر ختم کیا جائے۔

We need only