اللہ کے نام سے جو رحمان و رحیم ہے۔

اے لوگو جو ایمان لاۓ ہو، اللہ اور اس کے رسول کے آگے پیش قدمی نہ کرو1 اور اللہ سے ڈرو، اللہ سب کچھ سننے اور جاننے والا ہے 2۔

اے لوگو جو ایمان لاۓ ہو، اپنی آواز نبی کی آواز سے بلند نہ کرو، اور نہ نبیؐ کے ساتھ اونچی آواز سے بات کیا کرو جس طرح تم آپس میں ایک دوسرے سے کرتے ہو3، کہیں ایسا نہ ہو کہ تمہارا کیا کرایا سب غارت ہو جاۓ اور تمہیں خبر بھی نہ ہو4۔ جو لوگ رسول خدا کے حضور بت کرتے ہوۓ اپنی آواز پست رکھتے ہیں وہ در حقیقت وہی لوگ ہیں جن کے دلوں کو اللہ نے تقویٰ کے لیے جانچ لیا ہے 5، ان کے لیے مغفرت ہے اور اجر عظیم۔

اے نبی، جو لوگ تمہیں حجروں کے باہر سے پکارتے ہیں ان میں سے اکثر بے عقل ہیں۔ اگر وہ تمہارے برآمد ہونے تک صبر کرتے تو نہیں کے لیے بہتر تھا6، اللہ در گزر کرنے والا اور رحیم ہے 7۔

اے لوگو جو ایمان لاۓ ہو، اگر کوئی فاسق تمہارے پاس کوئی خبر لے کر آۓ تو تحقیق کر لیا کرو، کہیں ایسا نہ ہو کہ تم کسی گروہ کو نا دانستہ نقصان پہنچا بیٹھو اور پھر اپنے کیے پر پشیمان ہو8۔ خوب جان رکھو کہ تمہارے درمیان اللہ کا رسول موجود ہے۔ اگر وہ بہت سے معاملات میں تمہاری بات مان لیا کرے تو تم خود ہی مشکلات میں مبتلا ہو جاؤ9۔ مگر اللہ نے تم کو ایمان کی محبت دی اور اس کے تمہارے لیے دل پسند بنا دیا، اور کفر و فسق اور نافرمانی سے تم کو متنفر کر دیا۔ ایسے ہی لوگ اللہ کے فضل و احسان سے راست رو ہیں10 اور اللہ علیم و حکیم ہے 11۔

اور اگر اہل ایمان میں سے دو گروہ آپس میں لڑ جائیں12 تو ان کے درمیان صلح کراؤ13۔ پھر اگر ان میں سے ایک گروہ دوسرے گروہ سے زیادتی کرے تو زیادتی کرنے والے سے لڑو14یہاں تک کہ وہ اللہ کے حکم کی طرف پلٹ آۓ 15۔ پھر اگر وہ پلٹ آۓ تو ان کے درمیان عدل کے ساتھ صلح کرا دو 16۔ اور انصاف کرو کہ اللہ انصاف کرنے والوں کو پسند کرتا ہے 17۔ مومن تو ایک دوسرے کے بھائی ہیں، لہٰذا اپنے بھائیوں کے درمیان تعلقات کو درست کرو 18اور اللہ سے ڈرو، امید ہے کہ تم پر رحم کیا جاۓ گا۔ع


19اے لوگو جو ایمان لاۓ ہو، نہ مرد دوسرے مردوں کا مذاق اڑائیں، ہو سکتا ہے کہ وہ ان سے بہتر ہوں، اور نہ عورتیں دوسری عورتوں کا مذاق اڑائیں، ہو سکتا ہے کہ وہ ان سے بہتر ہوں20 آپس میں ایک دوسرے پر طعن نہ کرو21 اور نہ ایک دوسرے کو برے القاب سے یاد کرو22۔ ایمان لانے کے بعد فسق میں نام پیدا کرنا بہت بری بات ہے 23۔ جو لوگ اس روش سے باز نہ آئیں وہی ظالم ہیں۔

اے لوگو جو ایمان لاۓ ہو، بہت گمان کرنے سے پرہیز کرو کہ بعض گمان گناہ ہوتے ہیں 24۔ تجسس نہ کرو 25۔ اور تم میں سے کوئی کسی کی غیبت نہ کرے 26۔ کیا تمہارے اندر کوئی ایسا ہے جو اپنے مرے ہوۓ بھائی کا گوشت کھانا پسند کرے گا 27؟ تم خود اس سے گھن کھاتے ہو۔ اللہ سے ڈرو،اللہ بڑا توبہ قبول کرنے والا اور رحیم ہے۔

لوگو، ہم نے تم کو ایک مرد اور ایک عورت سے پیدا کیا اور پھر تمہاری قومیں اور برادریاں بنا دیں تاکہ تم ایک دوسرے کو پہچانو۔ در حقیقت اللہ کے نزدیک تم میں سب سے زیادہ والا وہ ہے جو تمہارے اندر سب سے زیادہ پرہیز گار ہے 28۔ یقیناً اللہ سب کچھ جاننے والا اور باخبر ہے 29۔

یہ بدوی کہتے ہیں کہ ’’ ہم ایمان لاۓ‘‘30۔ ان سے کہو ایمان نہیں لاۓ، بلکہ یوں کہو کہ ’’ ہم مطیع ہو گۓ ‘‘ 31۔ ایمان ابھی تمہارے دلوں میں داخل نہیں ہوا ہے۔ اگر تم اللہ اور اس کے رسول کی فرماں برداری اختیار کر لو تو وہ تمہارے اعمال کے اجر میں کوئی کمی نہ کرے گا، یقیناً اللہ بڑا در گزر کرنے والا اور رحیم ہے۔ حقیقت میں تو مومن وہ ہیں جو اللہ اور اس کے رسول پر ایمان لاۓ پھر انہوں نے کوئی شک نہ کیا اور اپنی جانوں اور مالوں سے اللہ کی راہ میں جہاد کیا۔ وہی سچے لوگ ہیں۔

اے نبیؐ، ان (مدعیان ایمان ) سے کہو، کیا تم اللہ کو اپنے دین کی اطلاع دے رہے ہو؟ حالانکہ اللہ زمین اور آسمانوں کی ہر چیز کو جانتا ہے اور وہ ہر شے کا علم رکھتا ہے۔ یہ لوگ تم پر احسان جتاتے ہیں کہ انہوں نے اسلام قبول کرلیا۔ ان سے کہو اپنے اسلام اک احسان مجھ پر نہ رکھو، بلکہ اللہ تم پر اپنا احسان رکھتا ہے کہ اس نے تمہیں ایمان کی ہدایت دی اگر تم واقعی اپنے دعواۓ ایمان میں سچے ہو۔ اللہ زمین اور آسمانوں کی ہر پوشیدہ چیز کا علم رکھتا ہے اور جو کچھ تم کرتے ہو وہ سب اس کی نگاہ میں ہے۔ع